حج مسلم امہ کے اتحاد کا مظہرہے، ساتھی حجاج کے ساتھ اچھا سلوک کریں: امام کعبہ

مکہ مکرمہ (آن لائن) مسجد الحرام میں نمازِ جمعہ میں لاکھوں مسلمانوں نے شرکت کی۔ ہر رنگ و نسل ، قومیت اور مختلف زبانیں بولنے والے عازمینِ حج کی کثیر تعداد خانہ کعبہ میں نمازِ جمعہ کی ادائیگی کیلئے صبح سے ہی آنا شروع ہو گئی تھی۔ امام کعبہ نے عازمینِ حج کو مشائر مقدسہ کی عظمت، ماہ ذی الحجہ اور اسکے پہلے عشرے کی فضیلت اور مناسک حج کے دوران ساتھی حجاج سے برداشت ، رواداری اور اچھے سلوک کی خصوصی تلقین کی۔انہوں نے حج کو مسلم امہ کے اتحاد کا مظہر قرار دیتے ہوئے تمام مسلمانوں کو اللہ

کی بندگی اور رسول اللہ کے پاکیزہ طریقے کے مطابق زندگی بسر کرنے کی تاکید کی۔ مسجد الحرام کی انتظامیہ نے دوسری اقوام خصوصا اْردو سمجھنے اور بولنے والے عازمینِ حج کیلئے ایف ایم ریڈیو کے ذریعے خطبہء جمعہ کا لائیو اْردو ترجمہ بھی نشر کیا۔ موبائل فون استعمال کرنے والے عازمینِ حج کی کثیر تعداد نے اس سہولت سے فائدہ اٹھایا۔ واضح رہے کہ پاکستان سے سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے عازمینِ حج کی بڑی تعداد پہلے ہی مکہ مکرمہ پہنچ چکی ہے۔ 26اگست کو رات گئے پشاور سے روانہ ہونے والی آخری پرواز کے بعدسعودی عرب میں آنے والے پاکستانی عازمینِ حج کی تعداد 1لاکھ 79ہزار 2سو10ہو جائے گی۔ سرکاری سکیم کے عازمینِ کرام کوایام حج میں استعمال کیلئے تحائف کی تقسیم تقریبا مکمل ہو چکی ہے۔ وزارت کے طرف سے سرکاری عازمینِ حج کو سعودی عرب میں تیار کئے گئے خصوصی گفٹ پیک میں ایک کمبل، ایک جائے نماز، مزدلفہ کیلئے ایک قالین میٹ اور ایک ہوا والا تکیہ شامل ہے۔ عازمینِ حج کو کچھ دن بعد منیٰ میں ان کے مکاتب کے خیموں کے کارڈز کی تقسیم شروع کر دی جائے گی۔ اس سال مشائر ٹرین کے نزدیک مکاتب کیلئے ٹرین ٹکٹ کا بندوبست کیا گیا ہے جبکہ ٹرین سٹیشنوں سے دور والے مکاتب کے عازمینِ حج بسوں کے ذریعے عرفات اور مزدلفہ کا سفر کریں گے۔جن عازمین نے حج درخواست کے ساتھ قربانی کے پیسے بھی جمع کروائے تھے ان کے ناموں کی فہرستیں حجاج کی رہائشی عمارتوں میں چسپاں کی جا چکی ہیں۔ تمام عازمینِ حج کی قربانی سعودی محکموں کے ذریعے ذی الحجہ کو نمازِ عصر تک مکمل ہو جائے گی۔ عازمینِ حج 7ذی الحجہ کی رات سے ہی مکاتب کے زیر انتظام بسوں کے ذریعے مکہ مکرمہ سے حج کی نیت کرتے ہوئے احرام باندھ کر منیٰ کی طرف روانہ ہو جائیں گے۔