مبینہ ڈبل گیم، امریکہ کے ساتھ پاکستان کیا کر رہا ہے؟ حسین حقانی نے مضحکہ خیز دعوے کر دیے

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر حسین حقانی نے ایک بار پھر پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی شروع کر دی، حسین حقانی نے کہا کہ 1954سے اب تک پاکستان نے امریکہ سے 43 بلین ڈالر وصول کیے ہیں اور اسی پیسے سے پاکستان نے اپنا نیوکلیئر پروگرام بنایا جبکہ پاکستان نے ایسا نہ کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر حسین حقانی نے انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے 43 بلین ڈالر کے عوض امریکہ کو 50 اور 60 کی دہائی میں ائیر بیس

فراہم کرنےکا وعدہ کیا تھا لیکن پاکستان کی طرف سے وہ بھی پورا نہیں کیا گیا، انہوں نے کہا کہ پاکستان کو یہ بات سمجھانی چاہیے کہ پاکستان ایسا ملک ہے جس کا انحصار قرضوں پر ہے،کبھی پاکستان چین کے ذریعے سرمایہ کاری کی شکل میں قرضہ لیتا ہے مگر پاکستان نے اسی سرمایہ کاری کے لیے کبھی امریکہ سے بات چیت نہیں کی۔ حسین حقانی کا کہنا تھا کہ پاکستان ایک غریب ملک ہے اس کے لیے پیسہ بہت ضروری ہے، پاکستان ملک میں سے پورا ٹیکس اکٹھا نہیں کر پاتا۔ حسین حقانی نے اپنے دیے گئے انٹرویو میں پاکستان کے خلاف ڈبل گیم کر دی۔